مراکش پر سعودی، اسرائیلی اور امریکی دباؤ، ایران کے ساتھ تعلقات منقطع کردیے

Hits: 0

سعودی عرب نے ایران کے ساتھ مراکش کے سفارتی تعلقات منقطع ہونے کے بعد دعوی کیا ہے کہ تہران بدستور دیگر ملکوں کے معاملات میں مداخلت کر رہا ہے۔

سعودی وزیرخارجہ عادل الجبیر نے ایران کے ساتھ مراکش کے تعلقات منقطع ہونے کے بعد دعوی کیا ہے کہ ایران دیگر ملکوں کے داخلی معاملات میں مداخلت اور عرب و اسلامی ملکوں میں عدم استحکام پیدا کرنے کی کوشش کر رہا ہے-

سعودی وزیر خارجہ نے ساتھ ہی یہ بھی دعوی کیا کہ ایران مراکش کے اندر پولیساریو محاذ کے کارکنوں کو حزب اللہ کے ذریعے جو ٹریننگ دلوا رہا ہے وہ دیگر ملکوں میں ایران کی مداخلت کی ایک اور مثال ہے-

مراکش نے منگل کی شام اپنے عجیب و غریب اقدام کے تحت ایران کے ساتھ اپنے سفارتی تعلقات منقطع کر لئے۔ مراکش نے دعوی کیا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور حزب اللہ نے مغربی صحارا میں پولیساریو محاذ کی مدد کی ہے-

حزب اللہ نے مراکش کے اس بے بنیاد الزام کے جواب میں کہا ہے کہ یہ الزام امریکا، اسرائیل اور سعودی عرب کے دباؤ میں آکر حزب اللہ اور اسلامی جمہوریہ ایران پر عائد کیا گیا ہے-

حزب اللہ نے اپنے بیان میں اسلامی جمہوریہ ایران کے ساتھ تعلقات کو منقطع کر لینے کے تعلق سے مراکش کے اقدام پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ بہتر ہوتا کہ مراکش کی وزارت خارجہ، ایران کے ساتھ اپنے سفارتی تعلقات کو منقطع کرنے کی ٹھوس وجوہات بھی بیان کرتی-

مغربی صحارا کے پولیساریو محاذ نے بھی ایران کے ساتھ سفارتی تعلقات منقطع کر لینے کے مراکش کے فیصلے کے بعد کہا کہ پولیساریو محاذ کے لئے تہران کی حمایت کا الزام ایک جھوٹا اور من گڑھت الزام ہے اور پولیساریو محاذ کا ایران کے ساتھ کوئی تعاون یا رابطہ نہیں ہے-

واضح رہے کہ مراکش کے قریب واقع مغربی صحارا ماضی میں اسپین کی نوآبادی تھا اور انیس سو پچھہتر میں مراکش نے اس کو اپنی سرزمین میں ضم کر لیا لیکن پولیساریو محاذ اس علاقے کی آزادی کا مطالبہ کر رہا ہے-

یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ سعودی عرب اور اس کے اتحادی ممالک حزب اللہ کو کمزور کرنے کے لئے کسی بھی کوشش سے دریغ نہیں کر رہے ہیں-

بحرین کے وزیر خارجہ خالد بن احمد آل خلیفہ اور متحدہ عرب امارات کے وزیر مملکت برائے خارجہ امور انور قرقاش نے بھی مراکش کے ایران مخالف فیصلے کی حمایت کا اعلان کیا ہے۔

اس سے پہلے بھی کچھ عرب ملکوں منجملہ جیبوتی نے سعودی عرب کے دباؤ میں آکر اسلامی جمہوریہ ایران کے ساتھ اپنے سفارتی تعلقات منقطع کر لئے تھے-

یہ اقدامات ایک ایسے وقت انجام دیئے گئے ہیں جب ایران اور حزب اللہ علاقے میں امریکی، سعودی اور صیہونی محاذ کی سازشوں کو ناکام بنانے میں اہم کردار ادا کر رہے ہیں-

The post مراکش پر سعودی، اسرائیلی اور امریکی دباؤ، ایران کے ساتھ تعلقات منقطع کردیے appeared first on i14 News.

Powered by WPeMatico

taxi -

macbook tamir

- mersinportal.net - kalebet giriş